97

شب قدر کی فضیلت ستائیسویں رمضان شب

آج پاکستان میں مسلمان رمضان المبارک کی 27 ویں شب منا رہے ہیں۔ یہ رمضان کے آخری عشرے کی طاق رات ہے اور گمان یہی ہے کہ اسی کو لیلۃ القدر قرار دیا گیا ہے۔ یہ ایک ایسی رات ہے جس میں فرشتوں کے سردار حضرت جبریل امین علیہ السلام سمیت فرشتے زمین پر اترتے ہیں۔۔۔۔

 حضرتِ مالک بن اَنَس رضی اللہ تعالٰی عنہ بیان کرتے ہیں کہ رسول اللہ صلَّی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم کو ساری مخلوق کی عمریں دکھائی گئیں،آپ صلَّی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم نے اپنی اُمت کی عمریں سب سے چھوٹی  پائیں تو غمگین ہوئے کہ میرے اُمتی اپنی کم عمری کی وجہ سے  پہلے کی اُمتوں کے جتنے نیک اعمال نہیں کرسکیں گےچنانچہ اللہ پاک نے نبی کریم صلَّی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم کو شبِِ قدر عطا فرمائی جو دیگر اُمّتوں کے  ہزار مہینوں سے بہتر ہے۔ حکومتی گاڑی اپوزیشن گیئر میں پھنسی ہوئی ، ملک اس وقت آٹو پر چل رہا ہے: مصطفی کمال 

(تفسیر کبیر،ج11ص 231 ، تحت الآیۃ :3)

رسول اللہ ﷺ نے فرمایا:  “جس نے لَیْلَۃُ الْقَدْر میں ایمان اور اِخلاص کے ساتھ قیام کیا (یعنی نماز پڑھی) تو اُس کے گزشتہ (صغیرہ) گناہ معاف کردئیے جائیں گے ۔”

(بُخاری ج اول)

شبِ قدر کی دعا

اَللّٰہُمَّ اِنَّکَ عَفُوٌّ کَرِیمٌ تُحِبُّ الْعَفْوَ فَاعْفُ عَنِّیْ

(ترجمہ: اے اللہ! بے شک تو معاف فرمانے والا، کرم کرنے والا ہے، تو معاف کرنے کو پسند فرماتا ہے تو میرے گناہوں کو بھی معاف فرما دے۔)

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں