77

عرب امارات کا نیا منصوبہ

الشامی نیوز آن لائن نیوز

ابوظبی: متحدہ عرب امارات نے سمندری فضلہ ٹھکانے لگانے کا نیا منصوبہ پیش کر دیا ہے، جس کے ذریعے پورے خطے کے لیے تاریخی نتائج کا حصول کیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق متحدہ عرب امارات کی ویسٹ مینجمنٹ کمپنی بیئہ اور یونانی کمپنی پولی گرین مل کر سمندری اور ماحولیاتی مسائل حل کریں گے، انھوں نے ایو گرین کے نام سے مشترکہ منصوبہ شروع کر دیا ہے۔

اس منصوبے کے ذریعے خطے کے سمندروں کے تحفظ کے لیے سمندری فضلہ بہترین طریقے سے ٹھکانے لگایا جائے گا، منصوبے کا مقصد بحری فضلے کو ٹھکانے لگانے کی صنعت میں بہترین طریقوں کو فروغ دینا بھی ہے۔

ایو گرین نامی یہ کمپنی شارجہ کمپلیکس میں خام مال کے لیے اپنی ایک عمارت تعمیر کر چکی ہے، جہاں سمندری فضلے کو پراسس کر کے صنعتی استعمال کا متبادل مال تیار کیا جاتا ہے، اب گندے نالوں کے ذریعے آنے والے فضلے کو پراسس کر کے متبادل ایندھن میں بدلنے کے لیے ایک فیکٹری تعمیر کی جار ہی ہے۔

یہ دونوں فیکٹریز متحدہ عرب امارات کی بندرگاہوں پر آنے والے بحری جہازوں سے اکٹھا کیے گئے مضر اور غیر مضر فضلے کو ری سائیکل کریں گی۔

کمپنی پولی گرین کے سربراہ اتھناسیاس پولی کرونوپولوس نے اس منصوبے کو ماحول کی حفاظت اور ماحولیاتی تبدیلیوں کے چیلنج سے نمٹنے کے لیے کی جانے والی عالمی کوششوں کے لیے ایک سنگ میل قرار دیا۔

بیئہ کے چیئرمین سلیم بن محمد الاویس نے کہا کہ ایوگرین کمپنی متحدہ عرب امارات اور وسیع تر خطے کے لیے تاریخی نتائج حاصل کرنے کی جانب پیش قدمی کرے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں