57

>چودھری نثار کا پنجاب اسمبلی میں حلف نہ ہونے کی اندرونی کہانی سامنے آگئی

مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما اور سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار کے پنجاب اسمبلی میں حلف نہ ہونے کی اندرونی کہانی سامنے آ گئی۔

ذرائع کے مطابق پنجاب اسمبلی سیکریٹریٹ نے چودھری نثار کے خلاف عدالتی پٹیشنزکو جواز بنایا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ چودھری نثارکو بتایا گیا ہے کہ ان کے خلاف مختلف عدالتوں میں 5  پٹیشنز چل رہی ہیں، اسمبلی سیکریٹریٹ کو ابھی پٹیشنز کا اسٹیٹس نہیں معلوم۔

ذرائع کے مطابق اگر پٹیشن میں چودھری نثار کے خلاف اسٹے ہوا تو عدالتی کارروائی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

چودھری نثار سے درخواست کی گئی کہ اسمبلی سیکریٹریٹ کو پٹیشنز کا اسٹیٹس پتا کر لینے دیں۔

یاد رہے کہ نثار علی خان آج پنجاب اسمبلی حلف اٹھانے کے لیے پہنچے تھے تاہم اسپیکر اور ڈپٹی سپیکر پنجاب اسمبلی کی عدم موجودگی کے باعث اُن سے حلف نہیں لیا جا سکا۔

بعد ازاں اسمبلی کے باہر میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ایک ہفتے پہلے یہاں اسمبلی اور الیکشن کمیشن کو حلف کے بارے میں بتا دیا تھا۔ مگر آج کہا گیا کہ سپیکر اور ڈپٹی سپیکر کے بغیر حلف نہیں لیا جا سکتا ہے۔ یہ بالکل غلط ہے۔ چیئرمین کے پاس مکمل اختیارات ہوتے ہیں۔

اُن کا کہنا تھا کہ حکومت ایک خود ساختہ آرڈیننس لانے کی تیاری کر رہی ہے۔ یہ سب پاکستان کے آئین میں درج ہے۔ یہ ایک آرڈیننس لانے کی کوشش میں ہیں کہ جو ارکان مخصوص مدت کے دوران حلف نہ اٹھا پائیں انھیں نااہل قرار دیا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں