84

فطرہ اور فدیہ کی رقم مقرر کردی گئی

ے۔

سابق چیئرمین مرکزی رویت ہلال کمیٹی مفتی منیب الرحمٰن کی جانب سے صدقہ فطر اور فدیے کی کم از کم رقم 140 روپے فی کس مقرر کی گئی ہے۔ گندم کے حساب سے یہ فطرہ کی کم سے کم رقم ہے۔

اسی طرح کفارہ قسم 140 ہے، جب کہ کفارہ اور فدیہ صوم 60 مسکینوں کو کھانا کھلانا ہے۔ اہل ثروت اپنی مالی حیثیت کے مطابق فطرہ ادا کرسکتے ہیں۔

مفتی منیب الرحمٰن کے مطابق گندم کے حساب سے صدقہ فطر کی رقم 140 روپے فی کس جبکہ جو کے حساب سے 320 روپے فی کس مقرر کی گئی ہے۔

کھجور کے حساب سے صدقہ فطر کی رقم 960 روپے فی کس اور کشمش کے حساب سے 1920 روپے فی کس مقرر کی گئی ہے۔ پنیر سے 3450 روپے ہے۔

جو لوگ روزہ نہیں رکھ سکتے ، وہ تیس روزوں کا فدیہ چکی کا آٹا 8400 روپے ،جو 19200 روپے ، کھجور 57600روپے ، کشمش 115200روپے ادا کریں۔

صدقۂ فطر کیا ہے؟
صدقۂ فطر جسے فطرانہ یا فطرہ بھی کہتے ہیں، اسے صاحب استطاعت افراد کی جانب سے رمضان المبارک میں نماز عید الفطر سے قبل مستحق افراد کو دینا واجب ہے۔

فرض روزہ کسی بھی وجہ سے توڑ دینے پر کفارۂ صوم یعنی روزے کا کفارہ ادا کرنا لازم ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں