28

سعودی عرب میں روزگار کے مواقع، شاہ محمود قریشی نے پاکستانیوں کو بڑی خوشخبری سنادی

اسلام آباد : (الشامی نیوز) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ سعودی عرب سےتعلقات خراب کرنے کی کی تمام ترکوشش ناکام ہوگئی، عید کے بعد سعودی کےاعلیٰ حکام کا وفد پاکستان آئے گا اور سعودی عرب میں لاکھوں پاکستانیوں کے روزگار کے مواقع نکلیں گے۔

تفصیلات کے مطابق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کچھ عناصر سعودی عرب سےتعلقات خراب کرناچاہتےتھے، ان عناصر کی تمام تر کوشش ناکام ہوگئی، سعودی عرب سےایک معاہدے کے تحت طریقہ کار طے کرلیا ہے، معاہدے پر وزیراعظم عمران خان اور سعودی ولی عہد نے دستخط کیے ہیں، معاہدے میں خارجہ، معاشی اور ثقافت کو مدنظر رکھا گیا ہے۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ سعودی عرب سےبات چیت کے3دورہوئے، اس دوران سعودی عرب سےکھل کربات ہوئی ، ایک دوسرےکےنقظہ نظرکوسنااوراپنانقطہ نظرپیش کیا، عید کے بعد سعودی کےاعلیٰ حکام کاوفدپاکستان آئےگا، جس میں سعودی عرب میں ہوئی گفتگو کو آگے بڑھائے جائےگا، اس کےبعدسعودی عرب کےوزیرخارجہ پاکستان تشریف لائیں گے‌ اور کوشش ہوگی سعودی وزیر خارجہ 2گھنٹے نہیں کم ازکم 2دن کے لیے آئیں۔

وزیر خارجہ نے کہا سعودی عرب سےمعاشی تعلقات کوایک سمت دینی ہے، سعودی ولی عہدنےاپنےملک کی ترقی کےلیےپلان2030بنایاہے، پلان2030کےتحت سعودی عرب کوترقی کےلیےافرادقوت درکارہوگی، سعودی عرب میں لاکھوں پاکستانیوں کےروزگارکےمواقع نکلیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ کویت کےساتھ ویزوں کادیرینہ مسئلہ طےہوگیاہے، کویت میں عرصہ درارزسےرہنےوالےپاکستانیوں کامسئلہ حل ہوگیا جبکہ 7سال سےایران میں پاکستان کے کینو پر عائد پابندی ختم ہوگئی۔

دورہ سعودی عرب کے حوالے سے شاہ محمود قریشی نے کہا کہ 27ویں شب کوروضہ رسول ﷺپرحاضری کی اجازت ملی، پاکستان کومشکلات سےنکالنے کے لیے دعا کرنے کا موقع ملا، 27ویں روزےکوخانہ کعبہ میں داخلےکی اجازت ملی، تاریخ دیکھ لیں 27ویں روزےکوکتنی بارخانہ کعبہ کادروازہ کھلا، پاکستان کےلیےجودعاکرسکتےہیں وہ دعاکرنےکی کوشش کی۔

فلسطین میں اسرائیلی بربریت پر وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ فلسطین کےواقعےپرہمیں بےپناہ تشویش ہے، وزیراعظم نےسیکریٹری جنرل اوآئی سی بات کی اور آگاہ کیا ہمیں مسئلے پر یکجا مؤقف کی ضرورت ہے۔

انھوں نے مزید کہا کہ مغرب میں ایک شدت پسندطبقہ ہمارےجذبات مجروح کرتاہے ، 28ویں شب کو ترک وزیرخارجہ کامکہ سے فون آیا، ترک وزیرخارجہ نے کہا میری سعودی وزیر خارجہ سے ملاقات ہوگی، جس میں تجویز دوں گااوآئی سی کاہنگامی اجلاس بلایا جائے۔

نواز شریف سے متعلق شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ طبی بنیادپر نواز شریف کو باہر جانے کی اجازت دی گئی، شہبازشریف نے نوازشریف کی گارنٹی دی کہ علاج کے بعد واپس آئیں گے، شہبازشریف کی وہ گارنٹی ہوا میں اڑگئی ،وہ صحت مند ہیں ، نوازشریف تمام مصروفیات کررہےہیں خطابات کررہےہیں، عدالت کو نوازشریف کو باہر جانے کیلئےشہبازشریف کی گارنٹی کانوٹس لیناچاہیے۔

وزیر خارجہ نے کہا اب شہباز شریف کی بیماری کا جواز بنایاجارہاہے، شہبازشریف کی بیماری کا احساس ہے مگر اتنی سنجیدہ نہیں ہے ، اللہ نہ کرے کہ شہبازشریف بستر پر ہوں ایسی حالات نہیں ، وہ کل بھی اسلام آباد میں موجود تھے ، کل یہ چلے جائیں گےتو میڈیا پر ہم پر الزام لگےگاکہ مک مکا ہوگیا، قوم کو بتاناچاہتے ہیں پی ٹی آئی کسی مک مکا کیلئے تیار نہیں ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ کیا منی لانڈرنگ ،کرپشن کیخلاف آواز اٹھانے کا ٹھیکہ صرف عمران خان کا ہے،کرپشن کیخلاف جہاد ایک قومی فریضہ ہے سب کو اپنی ذمہ داری نبھانی ہے، نیب،عدلیہ ،ایگزیکٹیو کو اپنی اپنی ذمہ داریاں نبھانی ہیں، قانونی تقاضوں پر حکومت جو کرسکتی ہے وہ کرے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں