100

جمعیت علماء اسلام کی ڈسپلنری کمیٹی کا بڑا فیصلہ،4رہنماؤں کی پارٹی سے نکال دیا

جمعیت علماء اسلام کی ڈسپلنری کمیٹی کا بڑا فیصلہ،4رہنماؤں کی پارٹی سے نکال دیا

اسلام آباد:جمعیت علماء اسلام کی پارٹی ڈسپلنری کمیٹی نے بڑا فیصلہ کرتے ہوئے پارٹی پالیسی سے انحراف کرنے والے4 اراکین کی بنیادی رکنیت ختم کر دی اور انہیں پارٹی سےنکال دیا۔
تفصیلات کے مطابق جمعیت علماء اسلام کی پارٹی ڈسپلن کی خلاف ورزی کرنے والے ارکان کے معاملہ میں جمعیت علماء اسلام کی پارٹی ڈسپلنری کمیٹی نے پارٹی پالیسی سے انحراف کرنے والے 4اراکین سے متعلق بڑا فیصلہ کر لیا اور کمیٹی نے مولانا محمد خان شیرانی، حافظ حسین احمد، مولانا گل نصیب خان اور مولانا شجاع الملک کی بنیادی رکنیت ختم کردی۔ترجمان کے مطابق کمیٹی نے چاروں رہنماوں کو پارٹی ڈسپلن کی خلاف ورزی کرنے پر رکنیت ختم کرکے پارٹی سے نکال دیا،چاروں رہنماوں کو نکالنے کا فیصلہ پارٹی ڈسپلنری کمیٹی نے کیا جبکہ ڈسپلنری کمیٹی کے سربراہ سائیں عبدالقیوم ہالیجوی کی ہدایت پر پارٹی جلد بنیادی رکنیت ختم کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کریں گی۔ترجمان نے مزید کہا کہ کمیٹی ممبران آغاء ایوب شاہ، مولانا عبدالواسع، مولانا عبدالحکیم اکبری سمیت دیگر نے متفقہ طور پر فیصلہ کیا،چاروں رہنماوں کے ساتھ جو پارٹی رہنما پارٹی نظم سے متعلق پروگراموں میں شرکت کرے گا ان کی بھی رکنیت ختم کردی جائے گی۔اس سلسلہ میں منحرف رہنما حافظ حسین احمد کا کہنا تھا کہ پارٹی رکنیت معطلی کا باضابطہ آگاہ نہیں کیاگیا،ہم جےیوآئی ف کاحصہ نہیں،ہم جےیوآئی کاحصہ تھے،ہیں اور رہیں گے،جس منشور کے تحت پارٹی بنی تھی اس منشور کے تحت پارٹی کو چلایا جائے،پارٹی میں موروثیت ہے،مولانا موروثیت سے پارٹی چلانا چاہتے ہیں، جےیوآئی پاکستان کے پلیٹ فارم سے اپنی آواز بلند کریں گے۔

خیال رہے کہ نکالے گئے 4اراکین نے پارٹی پالیسی سے انحراف کیا تھا اور پارٹی قیادت کو ہی شدید تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔ 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں