25

اراضی پر قبضوں میں گینگ وار کے مفرور ملزمان ملوث ہونے کا انکشاف

کراچی ( الشامی نیوز ) سرجانی ٹاؤن سمیت شہر کے دیگر نواحی علاقوں میں سرکاری اور نجی اراضی پر قبضوں میں ملوث گینگ وارکے مفرور ملزمان چانڈیو برادران اور ان کے دیگر ساتھی شہریوں کے اغوا میں بھی ملوث رہے ہیں ، مفرور ملزمان کے 3 ساتھی 20 روز قبل اینٹی وائیلنٹ کرائم سیل کی پولیس پارٹی کے ساتھ منگھو پیر میں مقابلے کے دوران مارے گئے ، تحقیقاتی ادارے کے مطابق 4 مئی کی الصباح منگھو پیر کے علاقے لاڑو گوٹھ میں اینٹی وائیلنٹ کرائم سیل اور سٹیژن پولیس لائژن کمیٹی کے ہاتھوں مقالے میں مارے جانے والے 3 بین الصوبائی اغوا کاروں علی گوہر ، نوکوف اور شفیع محمد کے گروہ کے خاتمے کے لیے کوششیں جاری ہیں ، تفتیشی پولیس ذرائع نے بتایا کہ مارے جانے والے تینوں ملزمان نے جب سائٹ سپرہائی وے صنعتی ایریا تھانے کی حدود سے23 اپریل کو محسن مری اور ذوالفقار وسان کو اغوا کیا تھا اس وقت مذکورہ تینوں ساتھی بھی ان کے ساتھ تھے ، پانچوں افراد نے منگھو پیر نورانی ہوٹل کے قریب بیٹھ کو اغوا کا منصوبہ بنایا تھا اور وہیں بیٹھ کر تاوان کی رقم5 کروڑ روپے بھی طے کی تھی ، اینٹی وائلنٹ کی ٹیم نے جب ٹیکنیکل بنیادوں پر مغویوں کا پتہ لگانے کےبعد چھاپہ مارا تو میر حسن ، اصغر چانڈیو اور اکبر چانڈیو منگھو میں قبضے کی جگہ کا سودا کرنے گئے ہوئے تھے جب انہیں اطلاع ملی کہ ان کے تین ساتھی مقابلے میں مارے گئے ہیں تو تینوں روپوش ہوگئے تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں