49

حکومت کے اس ظلم و جبر کو برداشت نہیں کرینگے آخری حد تک جائیں گے، شیخ جمیل ریجنل جنرل سیکرٹری واپڈا ایمپلائز پیغام یونین جینکو تھری مظفرگڑھ

تھرمل پاور پلانٹس کی بندش اور ملازمین کو سرپلس کرنے کے خلاف پیغام یونین کی جانب سے تھرمل کے مین گیٹ پر احتجاجی دھرنا دوسرے روز میں داخل ہو گیا تھرمل پاور ملازمین کا حکومت کے خلاف شدید نعرے بازی اور احتجاج کیا اس موقع پر واپڈا پیغام ایمپلائز یونین کے صوبائی صدر پنجاب ریجن، شمشاد شاھین ، ریجنل جنرل سیکرٹری ایم جمیل شیخ کا کہنا تھا کہ پاکستان کے مختلف تھرمل میں کام کرنے والے 1700 ملازمین کو سرپلس کیا گیا جس میں مظفرگڑھ کے 331 ملازمین کو بھی سرپلس کرکے مختلف کمپنیوں میں ڈی پرموٹ کرکے بھیج دیا گیا جو کہ سراسر ظلم ہے جو ملازم اس پاور ہاؤس میں 17 گریڈ پر کام کررہا تھا اسے مختلف کمپنیوں میں 3 اور 5 گریڈ پر سرپلس کرکے بھیجا جارہا ہے جو ہم بالکل تسلیم نہیں کرتے حکومت کی جانب سے اس ظلم و جبر کو کسی صورت برداشت نہیں کریں گے انہوں نے مزید کہا کہ تھرمل پاور مظفرگڑھ میں چند ملازمین ایسے ہیں جو ریٹائرمنٹ ہونے کے قریب تھے اور کچھ LPR پر تھے آفیسران بالا نے آرڈرز نکال کر ریلیو کرنے کی تیاریاں مکمل کرلیں ہیں لیکن کوئی ملازم اس فیصلہ کو نہ تو تسلیم کرتا ہے نہ آرڈر موصول کرے گا ہم اس فیصلے کے خلاف ہر حربہ آزمائیں گے اور اس ظالمانہ پالیسی کو کسی صورت برداشت نہیں کریں گے ان کا مزید کہنا تھا کہ اس مشکل وقت میں تمام تر لیبر یونینز ایک پلیٹ فارم پر اکٹھے ہیں اور اس کیس کو ہر صورت لڑیں گے اس حوالہ سے دونوں یونینز ملکر ایک کمیٹی بنارہے ہیں جو تمام تر مسائل کو دیکھیں گے اور ملازمین کا مقدمہ لڑیں گے حکومت کی ناقص پالیسیوں کے باعث پہلے تھرمل کو تباہ کیا گیا ہے اور پھر ملازمین کے ساتھ یہ جبر کیا جارہا ہے مطالبات پورے ہونے تک یہ احتجاج جاری رہے گا اور کسی آفیسر کو تھرمل میں داخل ھونے نہیں دیں گے اور وقت آنے پر پارلیمنٹ اور واپڈا منسٹری کا بھی گھیراؤ کریں گے ملازمین کے احتجاجی دھرنے میں دیگر یونین عہدیداروں ، محمد ریاض، رانا اقبال، رمضان چانڈیہ، سرفراز میتلا ، نے بھی خطاب کیا اور حکومت کی اس ناقص پالیسیوں اور فیصلوں کے خلاف نعرے بازی کی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں