50

مردم شماری ہو یا این ایف سی ہو، مردم شماری پر ہم نے شروع سے احتجاج کیا، غلط مردم شماری ہوگی تو آپکا مزید حق مارا جائیگا، بلاول بھٹو

کراچی ( الشامی نیوز)چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو کا نیبر ہڈ امروومنٹ پراجیکٹ کے تحت فشرمین چورنگی سے ابراہم حیدری روڈ کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ میں سندھ حکومت کا معترف ہوں، ایک انفراسٹرکچر نظر آتا ہے اور دوسرا زیر زمین ہے جو سوریج اور نالوں کے منصوبے ہیں ، ہم نے کراچی کو آہستہ آہستہ تعمیر کرنا ہے، ماہی گیروں کے اس منصوبے پر خوش ہوں، یہ شروعات ہے دنیا کا مقابلہ کرنے کے لئے کام کرنے کی ضرورت ہے۔بلاول بھٹو نے کہا کہ ہمیں ہر محلے میں جانا ہوگا اور ایسے منصوبے بنانے ہونگے، گاؤں دیہات میں جائینگے، ہم نے نہ صرف ملیر کے لئے بلکہ دیگر جگہوں پر جائینگے، کورنگی کے لئے جو ہم نے کام کیا وہ سب کے سامنے ہیں، آپکو معلوم ہے ایم کیوایم اور پی ٹی آئی کے نمائندے بھی ہیں، سلیکٹیڈ لوگ بھی ہیں انہوں نے کیا کیا، ایم کیوایم پاکستان بھی اس حکومت کا حصہ ہیں، ان سے پوچھیں انہوں نے کورنگی کے لئے کیا کیا۔چیئرمین پی پی بلاول بھٹو نے کہا کہ حکومت ان کےووٹوں کی وجہ سے قائم ہے، سمجھ نہیں آرہا ہے کہ یہ ان کے ساتھ کیوں ہیں، تاریخی بیروزگاری غربت کاشکارکراچی ہے، مردم شماری کے مسئلے پر بھی کراچی کے ساتھ انصاف چاہتے ہیں۔امید کرتے ہیں کہ زیادہ شور کرنے والے بھی کراچی پر توجہ دینگے۔انکی حکومت کے طریقہ کار سے کراچی کے عوام کا حق مارا جارہا ہے۔بلاول بھٹو نے کہا کہ مردم شماری ہو یا این ایف سی ہو، مردم شماری پر ہم نے شروع سے احتجاج کیا، غلط مردم شماری ہوگی تو آپکا مزید حق مارا جائیگا، پیپلزپارٹی نے ہر فورم پر اسکو چیلنج کیا ہے، ہم اس ایشو پر حکومت کے اتحادیوں کے پاس بھی جارہے ہیں، اس ایشو پر سب کے ساتھ ملکر کام کررہے ہیں۔بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ   ایم کیوایم پاکستان کو اس حکومت کے ساتھ ایک دن بھی رہنا اپنے عوام کے ساتھ زیادتی ہے، ایم کیوایم پاکستان کے ووٹوں کی وجہ سے انکی حکومت قائم ہے، ہم باقی سیاسی جماعتوں سے بھی اپیل کرینگے کہ اپنی مجبوریوں کے بجائے عوام کی مجبوری کو دیکھیں، مہنگائی عروج پر ہے لوگ انکے بچوں کو اسکول بھیجیں یا ادویات کے اخراجات برداشت کریں، حکومت عوام کے مسائل کم کرنے کے بجائے اضافہ کررہی ہے۔

چیئرمین پی پی بلاول بھٹو نے کہا کہ جزائر کا نیا مسئلہ کھڑا کیا گیا، سندھ کے ماہی گیروں کے جزائر پر قبضے کی جب بھی کوشش کی گئی پیپلزپارٹی نے اسکی مخالفت کی، ناجائز آرڈیننس ختم ہوگیا ہے وہ ویسے بھی غیر قانونی تھا،اب انکو عوام اور پارلیمنٹ میں جانا ہوگا۔جزائر انکے نہیں بلکہ مقامی لوگوں کے ہیں، آپکو ماہی گیروں کو مطمعن کرنا ہوگا، انکو مطمعن کرنے تک آپکو ایک انچ بھی نہیں دینگے۔بلاول بھٹو نے مزید کہا کہ ہمارا جائز حق ہمیں دیا جائے تو نہ صرف کراچی بلکہ پورے ملک کی حالت بدل سکتے ہیں، یہ کٹھ پتلی ہیں انکی حکومت جارہی ہے، یہ ختم ہونے والے ہیں۔ 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں