42

دہشت گردی کو ختم کرنے والے دعویدار کہاں ہیں،قبائلی علاقے اور بلوچستان غیر محفوظ ہیں , مولانا فضل الرحمن

بنوں روانگی سے قبل میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم)کے سربراہ مولانا فضل الرحمن کا کہنا تھا کہ وزیراعظم نے پسپائی کا راستہ اختیار کیا ہوا ہے،ملتان،لاہور میں پی ڈی ایم کے جلسوں اور ریلیوں میں رکاوٹیں کھڑی کی گئی،مقامی میڈیا کو زبردستی غلط رپوٹنگ کرئی گئی جس کو انٹر نیشنل میڈیا نے مسترد کردیا، عوامی مینڈیٹ کو پس پشت ڈال کر موجودہ اسمبلیاں وجود میں لائی گئیں، اس جعلی اسمبلی کو وقت پورا نہیں کرنے دیں گے۔ان کامزید کہنا تھا کہ کوئٹہ میں بربریت کی عجیب وغریب داستان رقم کی گئی،دہشت گردی کو ختم کرنے والے دعویدار کہاں ہیں،قبائلی علاقے اور بلوچستان غیر محفوظ ہیں،بنوں جلسہ میں کوئٹہ کے بربریت اور حکومت کی سنجیدگی پر لائحہ عمل کا اعلان کیا جائے گا۔

ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ ہمارے پاس جنوری کو پورا مہینہ موجود ہے،اس مہینے میں ہم فیصلہ کریں گے ہم نے لانگ مارچ کب کرنا ہے، احتجاج کب کرنا ہے استعفے کب دینے ہے،اس حوالے سے ہم ایک میٹنگ بھی کریں گے،سینیٹ الیکشن کے حوالے سے متفقہ فیصلہ ہے،ہم اس اسمبلی کو جعلی اسمبلی سمجھتے ہیں ، عوام کو ان کے ووٹ کا حق واپس ملنا چاہیے،جعلی حکومت کے ساتھ قومی ڈائیلاگ خارجہ از امکان ہے۔ 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں