321

ایسی عبرت ناک شکست توبہ توبہ، اس بے عزتی سے شرم سے گھر میں منہ چھپاکر بیٹھ جانا بہتر ہے ، مریم نواز

مانسہرہ (الشامی نیوز) ا،تمام دھاندلی کے باوجود صرف آٹھ سیٹیں ملی،آٹھ سیٹیں بھی مسلم لیگ کے توڑے ہوئے کارکنوں کی ہیں۔ ایسی عبرت ناک شکست توبہ توبہ، اس بے عزتی سے شرم سے گھر میں منہ چھپاکر بیٹھ جانا بہتر ہے

مانسہرہ میں  مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز کا جلسہ سے خطاب میں کہنا ہے کہ میں ملک کی بیٹی میاں نوازشریف اور اپنی طرف سے مانسہرہ کو سلام پیش کرتی ہوں ،آج میزبان بھی میں اور مہمان بھی میں ہوں۔آج جب جلسہ گاہ آئی تو سوچا کہا دیکھو ادھر دیکھوں یا ادھر دیکھوں۔مجھے بہت خوشی ہوتی کہ پاکستان میں جہاں بھی جاتی ہوں ملک کے نواجون شیر نظر آتے ہیں،نوازشریف اور مریم نواز کا مانسہرہ سے رشتہ پرانا ہے۔مریم نواز کا کہنا تھا کہہزارہ اور پاکستان کی عوام سے جو وعدے نواز شریف نے کئے اس کی سزا آج وہ بھگت رہے ہیں،گیس اور بجلی کے وعدے جو نوازشریف نے کئے کیا وہ نبھائے ،انہوں نے کارکنوں سے سوال کیا کہ ہزارہ موٹروے کس نے بنائی ؟ عوام یہ بتاؤ نوازشریف کا پاکستان اچھا تھا یا پھر اس چور کا؟ کیا لاکھوں گھر اورکڑوروں نوکرایاں  آپکو ملی۔جب تک یہ جعلی حکومت ہے ملک نہیں چل سکتا،جب تک جعلی حکومت ہے غریب کے گھر کا چولہا نہیں چل سکتا،جب تک یہ جعلی حکومت ہے عوام چینی اور پیٹرول کیلئےترستے رہو گے۔مریم نواز کا مزید کہنا تھا کہ میں دس دن گلگت میں رہ کر آئی،پوری دنیا نے دیکھا کہ گلگت کے کونے کونے میں شیر ہی شیر تھا،گلگت بلتستان کا جعلی نتیجہ آیا تو کوئی بھی اسے نہیں مانتا،تمام دھاندلی کے باوجود صرف آٹھ سیٹیں ملی،آٹھ سیٹیں بھی مسلم لیگ کے توڑے ہوئے کارکنوں کی ہیں۔ ایسی عبرت ناک شکست توبہ توبہ، اس بے عزتی سے شرم سے گھر میں منہ چھپاکر بیٹھ جانا بہتر ہے ،آٹھ سیٹوں کی مبارکباد بھی خیرات میں سلیکٹرز کو دیتے ہیں۔جب پیپلزپارٹی اقتدار میں تھی تو گلگت میں 12سیٹیں ملی،ن لیگ کو اپنی حکومت بنانے کے لیے کسی بیساکھی کی ضرورت نہیں پڑی۔

مریم نواز نے کہا کہ  گلگت کے لوگ اپنی ضروریات کے لیے حکومت وقت کو ووٹ کرتے ہیں،یہاں لوگوں نے اپنا فائدہ نہیں دیکھا، لوگوں نے اس جعلی حکومت کو ووٹ نہیں دیا، لوگ تمہیں گلگت میں ووٹ کیوں دیتے، تم نے باقی پاکستان میں کیا دیا ہے جو لوگ تمہیں ووٹ دیتے، تم نے لوگوں کو دیا ہی کیا ہے جو تم گلگت میں ووٹ مانگنے پہنچ گئے، جب تم سے جواب پوچھا جاتا ہے تو تم کہتے ہو میں اورادارے ایک پیج پر ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں