81

مختلف ممالک کے سفیر اور عالمی تنظیموں کے نمائندوں کا ایل او سی کا دورہ

اسلام آباد:(الشامی نیوز) مختلف ممالک کے سفیر اور عالمی تنظیموں کے نمائندوں نے آج ایل او سی کا دورہ کیا اور وفد نےبھارت کی جانب سے سیز فائر معاہدے کی خلاف ورزیوں کا جائزہ لیا۔
پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے ڈائریکٹر جنرل میجر جنرل بابر افتخار نے کہا ہے کہ مختلف ممالک کے سفیر اور عالمی تنظیموں کے نمائندوں نے آج ایل او سی کا دورہ کیا۔ایل او سی جانے والے سفارتکاروں میں آزربائجان، بوسنیا،ہرزگووینیا،سعودی عرب ،جنوبی افریقہ اور فلسطین کے ‏سفیر شامل ہیں جبکہ برطانوی ،اٹلی،پولینڈ، ازبکستان اور جرمنی کے سفیر بھی وفد میں شامل ہیں۔حکام نے مزید کہا کہ ڈی جی آئی ایس پی آر وفد کو بارڈرز خاص طور پر ایل او سی کی صورتحال پر‏بریفنگ دی جس میں ڈی جی آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ بھارتی فورسز لائن آف کنٹرول پر سول آبادیوں کو نشانہ بناتی ہیں، کلسٹر ایمینیشن کے استعمال کی وجہ سے بچوں سمیت معصوم شہری جاں بحق ہوئے،پروفیشنل آرمی کے طور پر پاک فوج صرف بھارتی چیک پوسٹوں اور فوجی پوزیشنز کو ہی جواب میں نشانہ بناتی ہے۔وفدنے بھارت کی جانب سے سیز فائر معاہدے کی خلاف ورزیوں کا جائزہ لیا اوروفد کے ارکان نے بھارتی بلا اشتعال فائرنگ کے متاثرین سے بھی ملاقات کی۔حکام نے مزید کہا کہ پاکستان نے ہمیشہ اقوام متحدہ کے فوجی مبصر گروپ اور سفارتکاروں کے ایل او ‏سی کے دوروں کو خوش آمدید کہااور پاکستان نے سفارتکاروں اور مبصر کروپ کو حالات کے مشاہدہ کے لیے مقامی آبادی ‏تک رسائی دی ہے جبکہ بھارت میں غیر ملکی سفیروں کے ایل او سی کے دورے پر پابندی عائد ہے اور بھارت کی جانب سے ملٹری آبزور گروپ اور سفارتکاروں کو ہمیشہ ایل او سی کے ‏دورہ سے انکار کیا گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں