38

کورونا کی مریضہ زیادتی کا شکار ہونے کے 24 گھنٹے بعد دم توڑ گئی

بھوپال میں کورونا وائرس کی شکار مریضہ کو اسپتال عملے کے فرد نے زیادتی کا نشانہ بنایا، حالت بگڑنے پر وینٹیلیٹر پر بھی ڈالا گیا تاہم 24 گھنٹے بعد ہی دم تو

بھارت(اُن لائن نیوز) : بھارت میں کورونا مریض زیادتی کا شکار ہونے کے 24 گھنٹے بعد دم توڑ گئی۔تفصیلات کے مطابق بھارت میں کورونا کی وجہ سے تباہ کن صورتحال میں بھی زیادتی کے واقعات میں کمی نہ آسکی۔مدھیہ پردیش ریاست کے علاقے بھوپال کے ایک اسپتال میں میں کقرونا وائرس کی شکار مریضہ کو کو ہسپتال عملے کے ایک فرد نے جنسی زیادتی کا نشانہ بنا دیا۔بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق 47 سالہ مریضہ زیادتی کا شکار ہونے کے چوبیس گھنٹوں بعد ہلاک ہوگئی۔یہ واقعہ 6 اپریل کو پیش آیا۔مقامی میڈیا کے مطابق واقعے کے بعد ملزم کو گرفتار کر لیا گیا۔جبکہ واقعے سے متعلق متاثرہ خاندان کو بھی بے خبر رکھا گیا۔پولیس کے مطابق سنتوش نامی ملزم چھ اپریل کو وارڈ میں داخل ہوا اور اور زیر علاج مریضہ کا چیک اپ کیا۔

(جاری ہے)بعد ازاں مریضہ کو ایک اور کمرے میں لے جا کر زیادتی کا نشانہ بنایا۔حالت خراب ہونے پر مریض کو وینٹیلیٹر پر بھی ڈالا گیا تھا ہم سات اپریل کو وہ دم توڑ گئی۔میڈیا رپورٹس کے مطابق ملزم اس سے قبل 24 سالہ نرس کو بھی زیادتی کا نشانہ بنا چکا ہے۔ملزم کے خلاف مقدمہ درج کیا جا چکا ہے۔دوسری جانب بھارت میں کورونا کے مزید 3 لاکھ 26 ہزار سے زائد مریض سامنے آگئے ہیںگوا کے ہسپتال میں آکسیجن کی فراہمی رکنے پر مزید 13 مریض ہلاک جبکہ ہسپتال میں 4 دن میں مرنے والوں کی تعداد 74 ہو گئی ہی. ممبئی میں اموات بڑھنے پر آخری رسومات کے لیے جگہ کم پڑ گئی ہے۔اسی طرح بھارت سے آسٹریلیا جانے والی پہلی پرواز کے نصف مسافروں کا کورونا ٹیسٹ مثبت آگیا جس کے بعد مسافروں کو پرواز میں سوار ہونے سے روک دیا گیا ہے جبکہ یورپی یونین اور کینیڈا سمیت مختلف ملکوں سے امداد بھارت پہنچانے کا سلسلہ جاری ہے،بھارتی ذرائع ابلاغ کے مطابق ملک کے وسیع دیہی علاقوں میں کورونا وائرس کے تیزی سے پھیلنا انتہائی خطرناک ہے اور آنے والے دنوں میں بھارت خوراک کی شدید کمی کا شکار ہوسکتپاکست

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں