49

کسان تحریک کی حمایت میں خود کشی کر رہا ہوں، بھارتی وکیل کا سنسنی خیز نوٹ سامنے آ گیا

نئی دہلی: (الشامی نیوز / آن لائن نیوز) بھارت میں مودی سرکار کے ظالمانہ زرعی قوانین کے خلاف بر سر پیکار کسان تحریک میں ایک اور خودکشی کا واقعہ سامنے آ گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق بھارت میں ایک وکیل امر جیت سنگھ نے زہر کھا کر خود کشی کر لی، اپنی جان لینے سے قبل انھوں نے ایک نوٹ لکھا جس میں انھوں نے اپنی موت کا ذمہ دار وزیر اعظم نریندر مودی کو قرار دیا۔

امر جیت سنگھ نے خود کشی نوٹ میں لکھا کہ میں کسان تحریک کی حمایت میں اپنی زندگی قربان کر رہا ہوں، اور میری موت کا ذمہ دار نریندر مودی ہے، تینوں زرعی قوانین کسانوں اور مزدوروں کو نقصان پہنچانے والے ہیں۔

پولیس کے مطابق وکیل نے خود کشی اتوار کی شب دہلی کی سرحد پر ٹیکری بارڈر کے قریب کی ہے، جہاں چند دن قبل سَنت بابا رام سنگھ نے بھی مودی حکومت کے خلاف احتجاجاً خود کشی کی تھی۔

پولیس کا کہنا ہے کہ وکیل نے نوٹ لکھنے کے بعد کوئی زہریلی شے کھائی، جس کے بعد اسے نیم مردہ حالت میں روہتک کے اسپتال پہنچایا گیا، لیکن اس کی جان نہ بچائی جا سکی۔ پولیس کے مطابق خودکشی نوٹ میں کچھ حصہ ٹائپ شدہ ہے جب کہ کچھ حصہ قلم سے لکھا گیا ہے، پولیس نے خط کو جانچ کے لیے بھیج دیا ہے۔

وکیل نے خط میں لکھا کہ وزیر اعظم کچھ لوگوں کے ہی بن کر رہ گئے ہیں، تینوں زرعی قوانین کسانوں کے ساتھ ساتھ مزدور اور عام آدمی کی زندگی تباہ کر دیں گے، کسان، مزدور اور عوام کی روزی روٹی حکومت چھیننے میں لگی ہوئی ہے۔

واضح رہے کہ مودی حکومت کے پاس کردہ متنازعہ زرعی قوانین کے خلاف کسانوں میں غصہ بڑھتا جا رہا ہے اور دہلی کے بارڈرز پر مظاہرین کی تعداد میں بھی مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔

اس سے قبل 16 دسمبر کو سِنگھو بارڈر پر کسانوں کے مظاہرہ میں سَنت بابا رام سنگھ نے خود کو گولی مار کر ہلاک کر لیا تھا، وہ کئی دنوں سے بارڈر پر کسانوں کی تحریک میں پیش پیش نظر آ رہے تھے اور کسانوں کی تکلیف دیکھ کر غم میں ڈوبے ہوئے تھے، وہ لوگوں میں کمبل اور کھانا بھی تقسیم کرتے ہوئے کئی بار دیکھے گئے۔

سنت رام نے خودکشی نوٹ میں لکھا کہ کسان تکلیف میں ہیں، حکومت ظالم اور پاپی ہے، ظلم برداشت کرنا بھی گناہ ہے، کسانوں کے حق میں کسی نے کچھ تو کسی نے کچھ کیا، میں سرکاری ظلم کے خلاف غصے کے اظہار کے لیے خود کشی کر رہا ہوں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں