51

سعودی عرب کے ساحل پر لبنانی مرد و خواتین نے بے حیائی کی انتہا کر دی

سعودی عرب کے ساحل پر لبنانی مرد و خواتین نے بے حیائی کی انتہا کر دی

ریاض ::(الشامی آن لائن نیوز ) سعودی عرب ایک اسلامی ملک ہے، جہاں شرم و دیگر اخلاقی و اسلامی اقدار کا بہت زیاد ہ خیال رکھا جاتا ہے۔ بے شرمی کی حرکات کرنے والوں سے سختی سے نمٹا جاتا ہے تاہم گزشتہ کچھ عرصہ سے اس ملک میں فحاشی کے واقعات میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ ایک ایسا ہی تازہ ترین واقعہ سعودی عرب کے ساحلی علاقے خوبار میں پیش آیا ہے جہاں چند غیر ملکیوں نے بے حیائی کی ایسی انتہا کر دی جس پر سعودی عوام شدیدمشتعل ہیں۔تفصیلات کے مطابق ایک ویڈیو وائرل ہوئی ہے جس میں چند لبنانی مرد اور خواتین خوبار کے ساحلی علاقے میں ایک مخلوط پارٹی کے دوران رقص کر رہے ہیں اور اس دوران انتہائی نازیبا حرکت بھی کرتے رہے۔ سب سے شرمناک بات یہ تھی کہ انہوں نے اس پارٹی کے دوران تیراکی کا بے ہودہ لباس پہن رکھا تھا۔

یہ ویڈیو سامنے آنے کی دیر تھی جس کے فوراً بعد ”برہنہ لبنانی“ کے نام سے ہیش ٹیگ بنا کر اس واقعے پر سخت غم و غصے کا اظہار کیا جا رسعودی عوام نے مطالبہ کیا ہے کہ سعودی عرب پر بے حیائی اور فحاشی پھیلانے والے ان لبنانی افراد سے سختی سے نمٹا جائے تاکہ آئندہ کسی کو کھُلے عام اس طرح کی رنگ رلیاں منانے اور شرمناک حرکات کی جرات نہ ہو سکے۔ اس واقعے کی ویڈیو پولیس کے نوٹس میں آنے کے بعد ان افراد کے خلاف قانونی کارروائی شروع کر دی گئی ہے۔ واضح رہے کہ سعودی عرب میں 29 جنوری کو سوشل میڈیا اسٹار خاتون فوز العتیبی کی جانب سے پوسٹ کی جانے والی تصویر اور ویڈیوز نے تمام حدیں پار کر لی تھیں۔فوز العُتیبی نے ایک انتہائی شرمناک تصویر پوسٹ کی ہے جس میں وہ ایک مشہور ثقافتی مقام پر اپنے خاوند کے ساتھ سر عام بوس و کنار میں مصروف ہے اس موقع پر اس نے سفید رنگ کا ایسا فراک پہن رکھا ہے جس میں اُس کا جسم عریانی کی حدوں کو چھو رہا ہے۔ ابھی صارفین اس تصویر ِپر ہی اپنے غم و غصے کا اظہار کر رہے تھے کہ بے باک نظریات کی حامل فوز العتیبی نے اگلے روز یعنی 30 جنوری کو اپنی ایک انتہائی شرمناک ویڈیو بھی پوسٹ کر ڈالی۔اس ویڈیو میں بھی وہ اسی مشہور سیاحتی مقام پر موجود ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں