71

ہم ایک سے ڈیڑھ ارب روپے کی رقم واجبات کی مد میں ادا کر چکے ہیں، بدقسمتی سے کچھ ایسے چینلز ور اخبارات ملازمین کو تنخواہیں ادا نہیں کررہے، وفاقی وزیر اطلاعات، شبلی فراز

کراچی کے عوام کی خدمت کرنا ہمارا فرض ہے، شبلی فراز

کراچی ( الشامی نیوز) وفاقی وزیر اطلاعات شبلی فراز نے کراچی کے عوام لیے خدمت کا عزم ظاہر کرتے ہوئے کراچی کے عوام کی خدمت کرنا ہمارا فرض بنتا ہے اور کوشش ہے کہ کراچی کے اہم بڑے مسائل کو حل کر کے عوام کو سہولت پہنچائیں۔

کراچی میں میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات شبلی فراز نے کہا کہ کراچی کے عوام نے ہمیں بڑی تعداد میں ووٹ دیے اور ہمیں نشستیں بھی ملیں لہٰذا ہم سمجھتے ہیں کہ کراچی کے لیے کام کرنا ہمارا فرض بنتا ہے اور ہماری کوشش ہے کہ کراچی کے اہم بڑے مسائل کے حل کے لیے تمام مواقعوں سے فائدہ اٹھائیں جس سے کراچی کے عوام کو سہولت ہو۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت اندرون سندھ اتحادیوں کے ساتھ مل کر پیکیجز بھی بنا رہی ہے جس سے سندھ کے دیگر اضلاع کو بھی ان کا حق مل سکے اور بارش کے نتیجے میں ہونے والے نقصان کا ازالہ ہو سکے۔

شبلی فراز نے حکومت مخالفت احتجاج کو ذاتی مفاد قرار دیتے ہوئے کہا کہ عوام پاکستان تحریک انصاف کو ووٹ دے کر اس لیے اقتدار میں لے کر آئے تاکہ اس ملک میں کرپشن اور لوٹ میں ملوث عناصر کا احتساب ہو سکے اور عوام میں بے یقینی پھیلانے کے لیے جو مختلف جلسے جلوسوں کی کوششیں ہو رہی ہیں، اس کا بنیادی طور پر ایک ہی مقصد ہے کہ پیپلز پارٹی ہو یا مسلم لیگ(ن)، وہ اپنے لیڈران کی کرپشن کو چھپا سکیں اور کسی طرح سے حکومت مذاکرات پر راضی ہو جائے اور ان کے کرپشن کے کیسز میں نرمی کی جائے۔

ان کا کہنا تھا کہ اگر آپ اپنے ذاتی مفاد کے لیے ملک کے اداروں فوج، عدلیہ کو داؤ پر لگانا چاہتے ہیں تو قوم اس کو بالکل تسلیم نہیں کرے گی کیونکہ یہ ادارے ہیں تو ملک چل رہا ہے۔

شبلی فراز نے کہا کہ کورونا وائرس سے دنیا کے دیگر ملکوں کے مقابلے میں ہمیں زیادہ نقصان نہیں پہنچا لیکن ہماری معیشت پر اثر پڑا، بے روزگاری بھی بڑھی اور ایسے حالات میں کوئی اپوزیشن پارٹی اس طرح کی مہم شروع کرنا چاہتی ہے تو وہ ملک دوست نہیں ہو سکتی۔

وزیر اعظم آزاد کشمیر سمیت 40افراد کے خلاف بغاوت کے مقدمے کے حوالے سے سوال پر ان کا کہنا تھا کہ اس معاملے سے ہمارا کوئی لینا دینا نہیں، اس ملک میں کوئی بھی کسی کے بھی خلاف ایف آئی آر درج کرا سکتا ہے۔

وزیر اطلاعات نے ملک میں مہنگائی اور ابتر صورتحال کے تاثر کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ یہ ملک کو جس حالت میں چھوڑ کر گئے تھے اس وقت صرف 6ہفتوں کے زرمبادلہ کے ذخائر موجود تھے۔

انہوں نے کہا کہ ملک دیوالیہ ہونے کے قریب تھا لیکن اس کے بعد ہم نے معیشت کو سنبھالا دیا، کورونا وائرس کی وبا اور ملک میں سیلاب کے باوجود اس وقت ہماری معیشت بہتری کی جانب گامزن ہے اور ہمارے زرمبادلہ کے ذخائر دوبارہ 20ارب ڈالر پر لے کر چلے گئے ہیں، کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ صفر کردیا ہے جبکہ بیرون ملک ترسیلات بھی مثبت ہیں اور مہنگائی کے سوا ہمارے تمام اشاریے مثبت ہیں۔

میڈیا ملازمین کو تنخواہ کی عوام ادائیگی کے حواللے سے سوال پر شبلی فراز نے کہا کہ ہماری حکومت کے بعد سے اب تک ہم ایک سے ڈیڑھ ارب روپے کی رقم واجبات کی مد میں ادا کر چکے ہیں، بدقسمتی سے کچھ ایسے چینلز ور اخبارات ملازمین کو تنخواہیں ادا نہیں کررہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم اب ایک میکانزم بنا رہے ہیں جس میں اس بات کی گارنٹی لی جائے گی کہ جن چینلز اور پیسے مل رہے ہیں، ان کو ہم براہ راست تنخواہیں دیا کریں گے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں