67

پنجاب پبلک سروس کمیشن: پیپرز لیک کرنے کے الزام میں ریجنل ہیڈ گرفتار

لاہور:  محکمہ اینٹی کرپشن نے پنجاب پبلک سروس کمیشن کے پیپرز لیک کرنے کے الزام میں ریجنل ہیڈ کو گرفتار کر لیا۔

محکمہ اینٹی کرپشن کے مطابق گرفتار ملزمان کی نشاندہی پر ریجنل ہیڈ بہاولپور فرقان احمد کو حراست میں لیا گیا ہے۔

ذرائع اینٹی کرپشن کا کہنا ہے کہ فرقان احمد پیپرز لیک کرنے والے گروہ کا حصہ تھا۔ حکام کے مطابق اینٹی کرپشن انسپکٹر کے پیپرز میں پوزیشن لینے والے ٹاپرز نے پیپر خریدا، تمام ملزمان سے ہر پہلو پر تحقیقات کا عمل جاری ہے۔

اس سے قبل محکمہ اینٹی کرپشن نے پنجاب پبلک سروس کمیشن کے پیپرز لیک کرنیوالے مبینہ چار ملزمان کو گرفتار کر لیا تھا۔

محکمہ اینٹی کرپشن کے مطابق گرفتار ملزموں میں ایک صوبائی پبلک سروس کمیشن (پی پی ایس سی)  کا ملازم ہے۔ ملزمان نے لاکھوں روپے کے عوض مختلف پیپرز لیک کرنے کا اعتراف کیا ہے۔

محکمہ اینٹی کرپشن ذرائع کے مطابق پنجاب پبلک سروس کمیشن کے پیپرز لیک کرنے میں ڈیٹا انٹری آپریٹر ملوث نکلا ہے۔ اینٹی کرپشن ٹیم خفیہ آپریشن کے ذریعے مرکزی ملزم وقار اکرم تک پہنچی اور تحصیلدار کا پیپر خریدنے کیلیے 8 لاکھ میں ڈیل طے کی۔ پیپر دینے کےلیے ملزم پہنچا تو اسے تین ساتھیوں سمیت گرفتار کر لیا گیا۔

ڈائریکٹر ویجیلینس اینٹی کرپشن عبدالسلام عارف نے کہا تھا اس گروہ نے اب تک چار سے پانچ پیپرز لیک کرنے کا اعتراف کیا ہے۔

اینٹی کرپشن حکام کا کہنا ہے کہ پیپر خریدنے والوں سمیت اس دھندے میں ملوث تمام افراد کے خلاف کارروائی کی جا رہی ہے۔

اس سے قبل ڈائریکٹر ویجیلینس اینٹی کرپشن عبدالسلام عارف نے کہا تھا کہ پنجاب پبلک سروس کمیشن کے اعلیٰ عہدیدار بھی اگر ملوث ہوئے تو ان کے خلاف کارروائی ہو گی۔

محکمہ اینٹی کرپشن کے ڈائریکٹر عبدالسلام عارف کے مطابق گرفتار ملزم غضنفر نے 20 سے زائد افراد کو پیپر بیچنے کا اعتراف کیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں