73

وزیراعظم نے کراچی نیوکلیئر پاور پلانٹ یونٹ ٹو کا افتتاح کردیا

کراچی : وزیراعظم عمران خان نےکراچی نیوکلیئر پاور پلانٹ یونٹ-2 (کے-2) کا افتتاح کردیا، کے ٹو نیوکلیئر پاور پلانٹ جدید نوعیت کا جنریشن تھری نیوکلیئر پاور پلانٹ ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ آج ہم پاکستان چین سفارتی تعلقات کے 70 سال مکمل ہونے کی خوشی منا رہے ہیں، چین کے ساتھ ہمارا منفرد تعلق ہے جو ایسا سیاسی تعلق بن چکا ہے جو عوامی سطح تک پہنچ چکا ہے، حالانکہ عوام سطح پر اتنا رابطہ نہیں ہے اور ہماری افرادی قوت دنیا کے دیگر ممالک میں زیادہ جاتی ہے لیکن چین سے وہ تعلق ہے جو ہر سطح تک پہنچ چکا ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے مزید کہا  کہ اس لیے ہم بہت خوش قسمت ہیں کہ ہماری دوستی اس ملک سے ہے جس سے ہم بہت کچھ سیکھ سکتے ہیں، جس طرح چین نے ترقی کی شہروں کو توسیع دی انہیں سنبھالا، آلودگی کم کی، ان سب مسائل کا سامنا اب پاکستان کو بھی ہے اس لیے انہوں نے ان سب پر کیسے قابو پایا اس سے ہم مغربی ممالک کے مقابلے زیادہ سیکھ سکتے ہیں کیوں کہ ان کی ترقی چین سے مختلف ہے۔چین سے ذرعی شعبے میں بھی مددلے رہے ہیں ۔

وزیراعظم نے چینی اٹامک کمیشن کے سربراہان کی تقاریر کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اس سے پاکستان کی افرادی قوت کی تربیت ہورہی ہے اور مزید بھی ہوگی اس عرصے کے دوران 40 ہزار چینی سائنسدان یہاں آتے رہے ہیں، لہٰذا اس پاور پلانٹ سے کو ٹیکنالوجی کا تبادلہ ہوگا اس سے ہمارے ملک کو بہت فائدہ ہوگا۔

 پاکستان اٹامک انرجی کمیشن کے مطابق کے-2 تھرڈ جنریشن کا جدید ترین پلانٹ ہے جس میں بہتر حفاظتی نظام بالخصوص اندرونی اور بیرونی حادثات کی روک تھام اور ہنگامی ردِعمل کی بہتر صلاحیت موجود ہے۔ پاکستان ایٹمی توانائی کمیشن کے زیرانتظام چھ ایٹمی بجلی گھرکام کررہے ہیں ان میں سے دوبجلی گھر کراچی کے ساحل کے قریب واقع ہیں جبکہ چاربجلی گھرچشمہ میں کام کررہے ہیں۔اب تک پاکستان میں ایٹمی ذرائع سے چودہ سومیگاواٹ بجلی حاصل کی جارہی ہے۔اس بجلی گھرسے نیشنل گرڈمیں گیارہ سومیگاواٹ بجلی شامل ہو گی، اسی صلاحیت کاکے تھری ایٹمی بجلی گھر اس وقت آخری مراحل میں ہے اورتوقع ہے کہ یہ اگلے سال کے شروع میں بجلی پیدا کرنے لگے گا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں