74

مسلم لیگ ن کی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس، 50 ارکان غیر حاضر قیادت سے کنارہ کشی اختیار کرلی ذرائع

اسلام آباد (الشامی نیوز) مسلم لیگ ن کی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس، 50 ارکان غیر حاضر، فارورڈ بلاک بنانے کی تیاریاں قیادت سے لاتعلقی کے لیے پریس کانفرنس کی تیاریاں

تفصیلات کے مطابق با خبر ذرائع ابلاغ نے نکشاف کیا ہے کہ مسلم لیگ ن کے پارلیمانی پارٹی اجلاس میں 40 سے 50 ارکان اسمبلی غیر حاضر تھے اس کی وجہ یہ ہے کہ ارکان اسمبلی جانتے ہیں کہ نواز شریف کا بیانیہ پارٹی کو بند گلی کی جانب دھکیل رہا ہے۔

ذرائع نے بتایا کہ غیر حاضر ارکان میں زیادہ تعداد ارکان قومی اسمبلی کی تھی اور ان میں سے بھی زیادہ تر وہ لوگ ہیں جو مسلم لیگ ن کا ٹکٹ لیتے ضرور ہیں مگر وہ اپنے حلقے سے اپنا ایک الگ ووٹ بینک بھی رکھتے ہیں۔

نواز شریف کے بیانیے کی وجہ سے ایسا بھی ہو سکتا ہے کہ جلد ہی فارورڈ بلاک سامنے آئے اور یہ ارکان اسمبلی یہ کہہ دیں کہ وہ مسلم لیگ ن کے ساتھ تو ہیں مگر وہ نواز شریف کے بیانیے کا ساتھ نہیں دے سکتے کیونکہ ان ارکان اسمبلی کو پارٹی ٹکٹ کی ضرورت نہیں ہوتی وہ اپنے ووٹ بینک سے ہی جیت سکتے ہیں

ذرائع نے بتایا کہ شہباز شریف نے پارلیمان میں آنے سے منع کر دیا ہے اور اس حوالے سے انہوں نے پارٹی رہنماؤں کو ہدایات جاری کی ہیں کہ ان کے پروڈکشن آرڈرز کے لیے درخواست نہ دی جائے، اس کی ایک وجہ یہ بھی ہے کہ وزیراعظم ماضی میں کہہ چکے ہیں کہ اب کسی کے پروڈکشن آرڈر جاری نہیں کیے جائیں گے۔

ذرائع نے قومی اسمبلی پر بات کرتے ہوئے بتایا کہ خواجہ آصف نے فرانس کے خلاف قرارداد پیش کی جس پر اپوزیشن کے ارکان نے انکار کرتے ہوئے کہا کہ وہ حکومت کی قرارداد کا حصہ نہیں بنیں گے وہ اپنی علیحدہ سے قرارداد لانا چاہتے ہیں۔
اس کے علاوہ انہوں نے بتایا کہ قومی اسمبلی کے اجلاس کے دوران ارکان اسمبلی سیٹیاں بجانے کے ساتھ ساتھ گھوڑوں اور گدھوں کی آوازیں نکالتے رہے جو کہ صورتحال انتہائی افسوس ناک ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں