44

لاڑکانہ: پی ٹی آئی سینیٹر کے بھائی اور پروونشل بلڈنگز کے انجینئر کے درمیان جھگڑا

ویب ڈیسک 19 مئی 2021

لاڑکانہ:(الشامی نیوز) پاکستان تحریک انصاف کے سینیٹر سیف اللہ ابڑو کے بھائی اورپروونشل بلڈنگز کے انجینئر کے درمیان جھگڑا ہوا ہے، صوبائی مشیر ورکس سروسزنثارکھوڑو نے واقعے کا نوٹس لے لیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق لاڑکانہ میں حال ہی میں منتخب ہونے والے پی ٹی آئی سینیٹر سیف اللہ ابڑو کے بھائی اورپروونشل  بلڈنگز کے انجینئر اور عملے کے درمیان جھگڑا ہوا۔

سینیٹر سیف اللہ ابڑو کے بھائی رحمت اللہ ابڑو نے الزام عائد کیا کہ پروونشل بلڈنگز انجینئر آفتاب ابڑو اور علی حسن نے نازیبا الفاظ کا استعمال کیا، ہمیں پی ٹی آئی کی وجہ سےانتقامی کارروائیوں کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔

پروونشل بلڈنگز انجینئر کا مؤقف ہے کہ رحمت الله ابڑو نے عملے اور بیٹے کو زدو کوب کیا، سرکاری کام میں مداخلت کی، قانونی کارروائی کیلئے ڈپٹی کمشنر کو آگاہ کردیا ہے۔

صوبائی مشیر ورکس سروسز کا نوٹس

صوبائی مشیر ورکس سروسز نثار کھوڑو نے پروونشل بلڈنگز انجینئر سے ہاتھاپائی اور بدکلامی کا نوٹس لے لیا ہے، نثار کھوڑو کی سیکریٹری ورکس سروسز کو رحمت ابڑو کیخلاف مقدمے کے اندراج کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ رحمت اللہ ابڑو غنڈہ گردی کےذریعے سرکاری افسران پر دباؤ ڈالناچاہتےہیں ہم کسی بھی شخص کو غنڈہ گردی ، سرکاری افسران پر دباؤ ڈالنےکی اجازت نہیں دینگے۔

پی ٹی آئی سینیٹر کا گورنر سندھ سے رابطہ

دوسری جانب پی ٹی آئی سینیٹر کےبھائی اور ایکس ای این میں جھگڑے کے معاملے پر سینیٹر سیف اللہ ابڑو بھی میدان میں آگئے اور انہوں نے فوری طور پر گورنر سندھ کو صورتحال سے آگاہ کردیا ہے۔

سینیٹرسیف اللہ ابڑو نے گورنر سندھ عمران اسماعیل کو بتایا کہ لاڑکانہ میں بدمعاشوں کی حکومت ہے، حملہ میرے بھائی پر کیا گیا، ایف آئی آربھی بھائی پر کرنےکا حکم دیا گیا ہے۔

پی ٹی آئی سینیٹر نے الزام عائد کیا کہ ہر ترقیاتی کام کا ٹینڈر فریال تالپور اور دیگر کی مرضی سےکھولا جارہا ہے، نثارکھوڑو کو پتہ ہی نہیں لاڑکانہ میں کیا ہورہا ہے؟ وہ یوسی کا ممبرنہیں ہوسکتا وزیراعلیٰ کامشیربنادیاہے، سپریم کورٹ اور چیئرمین نیب معاملےکی تحقیقات کریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں