21

سینیٹ انتخابات کی تیاریاں تیز ، پیپلز پارٹی کانئے چہرے سامنے لانے کا فیصلہ

پیپلز پارٹی کے سندھ سے منتخب 7 سینیٹرز مارچ میں ریٹائر ہوں گے، ریٹائر ہونے والے سینیٹرز میں سلیم مانڈوی والا، شیری رحمان، فاروق ایچ نائک، رحمان ملک، سسئی پلیجو، اسلام الدین شیخ، گیان چند شامل ہیں

کراچی (الشامی نیوز) پاکستان پیپلز پارٹی نے سینیٹ انتخابات کی تیاریاں تیز کر دی ہیں، سینیٹ انتخابات کے سلسلے میں پیپلزپارٹی نے نئے لوگوں کو ٹکٹ دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق پیپلز پارٹی کی اعلیٰ قیادت نے ٹکٹ کے سلسلے میں مشورے شروع کردیے ہیں۔ پیپلز پارٹی کی قیادت اس بارے میں مشاورت کررہی ہے کہ سینیٹ انتخابات میں ٹکٹ کس کس کو دیا جائے، پیپلز پارٹی کے سندھ سے منتخب 7 سینیٹرز مارچ میں ریٹائر ہوں گے۔ریٹائر ہونے والے سینیٹرز میں سلیم مانڈوی والا، شیری رحمان، فاروق ایچ نائک، رحمان ملک، سسئی پلیجو، اسلام الدین شیخ، گیان چند شامل ہیں۔ با خبر ذرائع نے دعویٰ کیا گیا ہے کہ پیپلز پارٹی کچھ ریٹائر سینیٹرز کو دوبارہ سینیٹ انتخابات میں اتارنے پر غور کر رہی ہے، شیری رحمان، فاروق ایچ نائک اور سلیم مانڈوی والا کو سینیٹ انتخابات لڑانے کا امکان ہے۔ ریٹائر ہونے والے متعدد سینیٹرز نے کروڑوں روپے کی بولیاں لگا دیں ٹکٹ حصول کرنے کے لیے پیپلز پارٹی کی اعلی قیادت کو راضی کرنے میں سرگرم

(جاری ہے)جبکہ دوسری جانب پیپلزپارٹی سینیٹ میں نئے لوگوں کو بھی لانے کا سوچ ہری ہے جس حوالے سے کئی نام زیر غور ہیں۔ پیپلزپارٹ پنجاب اور کے پی سینیٹ الیکشن “اوپن بیلٹ” سے کرانے کی حامی ہے۔ بتایا گیا ہے کہ ریٹائر ہونے کے بعد سسی پلیجو کو سندھ کابینہ میں شامل کرنے پر غور ہو رہا ہے، جبکہ ذرائع نے کہا ہے کہ سلیم مانڈوی والا کو کابینہ میں بھی اہم ذمہ داری دینے پر غور کیا جا رہا ہے۔دوسری جانب ضمنی انتخابات میں پیپلز پارٹی نے سندھ میں قومی و صوبائی اسمبلی کی 3 نشستوں پر الیکشن لڑنے کا فیصلہ کیا ہے۔ جبکہ مسلم لیگ ن اور جے یو آئی سانگھڑ اور ملیر میں پیپلز پارٹی کے امیدوار کی حمایت پر غور کر رہے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں