72

سردیوں میں کورونا وائرس کی دوسری لہر کا خدشہ ہے، وزیراعظم

اسلام (آباد الشامی نیوز) وزیراعظم عمران خان نے موسم سرما میں کورونا وائرس کی دوسری لہر کا خدشہ ظاہر کرتے ہوئے عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ احتیاطی تدابیر اپنائیں اور ماسک لازمی استعمال کریں۔

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ایک ٹوئٹ میں وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ دیگر ممالک کی نسبت پاکستان پر رب کریم کا خاص فضل رہا اور ہم کووڈ 19 کے بدترین اثرات سے محفوظ رہے۔


Imran Khan@ImranKhanPTIدیگرممالک کی نسبت پاکستان پر رب کریم کا خاص فضل رہا اور ہم COVID-19 کے بدترین اثرات سےمحفوظ رہے۔ خدشہ ہےکہ سرمامیں وباء کی دوسری لہر سر اٹھاسکتی ہے۔میری التماس ہےکہ وباء میں تیزاضافے سے بچاؤ کیلئےاچھی طرح منہ ڈھانپ کرنکلیں۔ تمام دفاتراور تعلیمی ادارےیقینی بنائیں کہ سب ماسک پہنیں۔1:17 PM · Oct 4, 202011.7KSee the latest COVID-19 information on Twitter

وزیراعظم نے لکھا کہ تاہم خدشہ ہے کہ سرما میں وبا کی دوسری لہر سر اٹھا سکتی ہے، لہٰذا میری درخواست ہے کہ اس میں تیزی سے اضافے سے بچاؤ کے لیے اچھی طرح منہ ڈھانپ کر نکلیں۔

انہوں نے کہا کہ تمام دفاتر اور تعلیمی ادارے یقینی بنائیں کہ سب ماسک پہنیں۔

خیال رہے کہ دسمبر 2019 میں چین کے شہر ووہان سے شروع ہونے والے کورونا وائرس کا پہلا کیس پاکستان میں 26 فروری 2020 کو رپورٹ ہوا تھا۔

جس کے بعد سے اب تک اس وائرس کو ملک میں 7 ماہ کا عرصہ گزر چکا ہے اور اس عرصے میں ملک مختلف مراحل س

کورونا وائرس کی وجہ سے ملک میں تعلیمی اداروں، صنعتوں، بازاروں، کھیلوں کے میدانوں سمیت مختلف شعبوں کو بندش کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

یہی نہیں بلکہ جون کے مہینے میں مجموعی صورتحال اس وقت تشویشناک ہوگئی تھی جب یومیہ کیسز کی تعداد 6 ہزار اور اموات 100 سے تجاوز کرگئیں۔

تاہم بعد ازاں یہ صورتحال بہتر ہوئی اور اگست کے مہینے میں معمولات زندگی بڑی حد تک بحال ہوگئے۔

ستمبر کے مہینے میں ملک میں 6 ماہ بعد تعلیمی ادارے بھی مرحلہ وار کھل گئے تاہم ستمبر کے وسط کے بعد سے ملک میں یومیہ کیسز کی تعداد کچھ حد تک بڑھتی دکھائی دے رہی ہے۔

صوبہ سندھ بالخصوص شہر کراچی میں گزشتہ کچھ روز سے کورونا وائرس کے کیسز میں اضافہ دیکھا گیا ہے۔

اسی اضافے کو دیکھتے ہوئے شہر قائد کے 7 اضلاع کے مختلف علاقوں میں مائیکر اسمارٹ لاک ڈاؤن نافذ کیا گیا ہے۔

اس کے علاوہ حکام کی جانب سے کارروائی کرتے ہوئے شہر میں 100 سے زائد ریسٹورنٹ، تقریباً درجن بھر شادی ہالز کو اسٹینڈرڈ آپریٹنگ پروسیجرز (ایس او پیز) کی خلاف ورزی پر بند کردیا گیا۔

یہاں یہ واضح رہے کہ ملک میں کورونا وائرس سے اب تک سب سے زیادہ متاثر صوبہ سندھ ہی ہے جہاں کیسز کی مجموعی تعداد ایک لاکھ 38 ہزار 50 ہے، جس میں سندھ پولیس کے 3 ہزار 409 جوان بھی شامل ہیں۔

واضح رہے کہ ملک میں مجموعی طور پر 3 لاکھ 14 ہزار 616 افراد وائرس سے متاثر ہوئے ہیں تاہم ان میں سے 2 لاکھ 98 ہزار 968 صحتیاب جبکہ 6 ہزار 513 انتقال کر چکے ہیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں