63

ریسٹورنٹس و شادی ہالز کورونا پھیلائو کے مراکز بن چکے ہیں سخت اقدامات کرنے کی ہدایات :این سی اوسی

اسلام آباد: (الشامی نیوز) نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر نے پاکستان میں کورونا کے مثبت کیسز میں معمولی اضافے پر کہا ہے کہ عوامی مقامات پر ماہرین صحت کی ہدایات پرعمل نہیں ہورہا۔
تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر اسد عمر کی زیرصدارت نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر کا اجلاس ہوا ہے ، ماہرین صحت نے اجلاس کے شرکاء کو خطے اور دنیا میں کورونا کی دوسری لہرکے اثرات سے آگاہ کیا ۔ اس کے ساتھ ہی اجلاس میں ملک میں کورونا کی صورتحال سمیت مختلف شعبوں کو کھولنے کے بعد کورونا کے اثرات کا جائزہ لیا گیا ۔ اجلاس میں شرکاء کی جانب سے کہا گیا کہ ملک میں کورونا کی مجموعی صورتحال مستحکم ہے،تاہم مثبت کیسز میں معمولی اضافہ ہوا ہے۔این سی او سی حکام نے کہا کہ ملک میں کورونا سے احتیاطی تدابیر میں عملدرآمد میں کمی دیکھی گئی ہے،سماجی فاصلے اور نو ماسک نو سروس کے اصولوں پرعمل نہیں ہورہا،عوامی صحت کی پرواہ کیے بغیر ہاتھ ملانا معمول بن چکا ہے۔عوامی مقامات پر ماہرین صحت کی ہدایات پرعمل نہیں ہورہا،عوامی اجتماعات بالخصوص ریسٹورنٹس اور شادی ہالز کورونا کے پھیلائو کے مراکز بن چکے ہیں۔ اجلاس میں کورونا کی ممکنہ دوسری لہر سے نمٹنے کےلیے جامع حکمت عملی پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا اور طے کردہ حکمت پر شراکت داروں سے مشاورت کا فیصلہ کیا گیا۔واضح رہے کہ ملک بھرمیں کورونا کیسز میں ایک بار پھر اضافہ دیکھنے میں آیا ہے ، نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کی جانب سے جاری کیے گئے تازہ اعداد و شمارکے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں میں کورونا سے مزید 9 افراد چل بسے جس کے بعد اموات کی مجموعی تعداد 6 ہزار544 ہوگئی ہے ۔ ملک میں‌ اب تک کورونا کے3لاکھ 16ہزار 934کیسزرپورٹ ہوچکے ہیں، پاکستان میں کورونا کے فعال کیسز کی تعداد 8 ہزار 015 رہ گئی ہے جبکہ گزشتہ 24 گھنٹوں میں 583 نئے کیسز رپورٹ ہوئے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں