118

حیدر آباد سے سکھر تک ریلوے ٹریک کا بڑا حصہ خطرناک قرار

سکھر: (الشامی نیوز) حیدر آباد سے سکھر تک ریلوے ٹریک کا بڑا حصہ خطرناک قرار دے دیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق آئے دن ریل گاڑیوں کے ٹریک سے اترنے کے واقعات کی وجہ معلوم ہو گئی، ریلوے حکام نے رپورٹ اعلیٰ حکام کو ارسال کر دی

ریلوے ذرایع کا کہنا ہے کہ حیدر آباد سے سکھر تک ریلوے ٹریک کا بڑا حصہ خطرناک قرار دیا گیا ہے، ریلوے اسٹیشن ماسٹرز نے ٹریک سے متعلق ڈرائیورز کو بھی آگاہ کر دیا ہے۔

ڈرائیورز کو ہدایات دی گئی ہیں کہ ٹریک کے متاثرہ مقامات پر ٹرین کی رفتار 10 سے 80 کلو میٹر فی گھنٹہ رکھی جائے تاہم ریلوے ذرایع کا کہنا ہے کہ متاثرہ ٹریک پر ٹرین کی رفتار کم رکھنے کی ہدایات پر عمل نہیں کیا جا رہا۔

ذرایع کے مطابق روہڑی سے حیدرآباد کے درمیان 100 کلو میٹر ٹریک خراب ہے، 350 کلو میٹرز کے درمیان متعدد مقامات پر ٹریک کم زور ہے، اور ٹریک خرابی کے باعث رواں سال ٹریک سے اترنے کے 20 سے زائد واقعات پیش آ چکے ہیں۔

یاد رہے کہ جمع کو راولپنڈی سےکراچی آنے والی ٹرین عوام ایکسپریس پٹری سے اتر گئی تھی، یہ واقعہ خیرپور ریلوے اسٹیشن پر پیش آیا تھا، جس میں عوام ایکسپریس کا انجن پٹری سے اتر گیا تھا، انجن اٹھانے کے لیے روہڑی سے ریسکیو ٹرین بھیجی گئی۔

دو ہفتے قبل سکھر میں بھی مال گاڑی کی بوگیاں پٹری سے اتر گئی تھیں، تاہم ڈی سی او ریلوے کا کہنا تھا کہ حادثہ کانٹے کی خرابی کے باعث پیش آیا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں