80

جعلی ڈگری پر میڈیکل پڑھنے اور نوکری کرنے والا لاہور جرنل ہاسپیٹل کا ایڈیشنل ایم ایس گرفتار

لاہور (الشامی نیوز) لاہور جنرل اسپتال کے ایڈیشنل ایم ایس ڈاکٹر اجمل کو جعلی ڈگڑی پر گرفتار کرلیا گیا ، ملزم نے اپنی میڈیکل کی ساری تعلیم اور بعد میں ساری نوکری ایف ایس ای کی جعلی ڈگری پر کی ، جب کہ ایف ایس ای میں ملزم کے اوریجنل نمبر 630 ہیں ، جو میڈیکل میں داخلہ کے لئے انتہائی کم ہیں جب کہ میرٹ لسٹ میں داخلے کے لئے جو جعلی ڈگری دکھائی اس پر اس کے 855 نمبر تھے ۔اس حوالے سے تفصیلات کے مطابق محکمہ اینٹی کرپشن پنجاب کی طرف سے لاہور جنرل اسپتال کے ایڈیشنل ایم ایس ڈاکٹر اجمل کی گرفتاری عملی میں لائی گئی ہے ، کیوں کہ سابق صدر ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن پنجاب اور موجودہ ایڈیشنل ایم ایس جنرل اسپتال ڈاکٹر اجمل کی ڈگری جعلی ثابت ہوگئی ، ہائی کورٹ سے ضمانت منسوخ ہونے کے بعد اینٹی کرپشن بہاولپور کی طرف سے ملزم کو گرفتار کرکے پرچہ بھی درج کرلیا گیا ۔

ڈی جی اینٹی کرپشن پنجاب کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ ملزم نے اپنی ایف ایس سی کی جعلی ڈگری بنوا کر قائداعظم میڈیکل کالج بہاولپور میں داخلہ لیا ، جس مقصد کے لیے ایک ماسٹر منظور احمد نامی شخص نے ملزم کو صوبہ سندھ کے شہر حیدرآباد کے تعلیمی بورڈ سے ایف ایس سی کی جعلی ڈگری بنوا کر دی ، داخلے کے بعد ایم بی بی ایس کی ڈگڑی کے دوران تیسرے ہی سال ملزم نے قائداعظم میڈیکل کالج بہاولپور سے سفارش کرواتے ہوئے پنجاب میڈیکل کالج مائیگریشن کروالی ۔مزید یہ کہ جب پاکستان میڈیکل کمیشن ( پی ایم سی ) کی طرف سے حیدرآباد بورڈ سے ملزم کی ایف ایس سی کی سند کی تصدیق کے لیے رابطہ کیا گیا تو معلوم ہوا کہ ڈگری جعلی ہے ، جس کے بعد پنجاب میڈیکل کالج کی طرف سے ملزم کو ایم بی بی ایس کے تیسرے سال نکال دیا گیا ، تاہم اس کے بعد ملزم نے ایک بار پھر جعلسازی سے کام لیا اور جعلی مائیگریشن لیٹر بنوا کر بقائی یونیورسٹی حیدر آباد کے میڈیکل کالج میں فائنل ائیر میں داخلہ لے لیا ، جس کے ایک سال بعد وہ ایف ایس سی کی جعلی سند پر داخلہ لینے پر ایم بی بی ایس ڈاکٹر بن گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں