68

بجلی مہنگی کرنے کی درخواست نیپرا نے موخرکردی سکھر ریجن میں آپریشن اینڈ مینٹیننسی کے نام پر اخراجات سب سے زیادہ کیوں ہیں؟

اسلام آباد ( الشامی نیوز)نیپرا نے سہہ ماہی ایڈجسٹمنٹس کی مد بجلی 86 پیسے فی یونٹ مزید مہنگی کرنے کا معاملہ 1 ہفتے کیلئے مؤخر کردیااورکہا کہ پہلے مطمئن کیا جائے کہ بجلی کی قیمت بڑھانا کیوں ضروری ہے؟

نیپرا نےبجلی مہنگی کرنے کی کمپنیوں کی درخواست پر سماعت کے دوران اہم سوالات اٹھادئیے۔ نیپرا نے موقف اختیار کیا کہ آئیسکوکی کپیسٹی چارجز کی مد میں 58 فیصداضافہ کیوں ہوا؟ سکھر ریجن میں آپریشن اینڈ مینٹیننسی کے نام پر اخراجات سب سے زیادہ کیوں ہیں؟

سی ای آئیسکو نے نیپرا کو بتایا کہ کپیسٹی چارجز بڑھنے کا سوال سینٹرل پاور پرچیزنگ ایجنسی سے پوچھا جائے۔ نیپرا نے سی پی پی اے کو ایک ہفتے کی مہلت دیتے ہوئے کپیسٹی چارجز بڑھنے کے معاملے پر تمام تفصیلات مانگ لیں۔ اس کے علاوہ تفصیلات نہ دینے پر ذمہ داران کیخلاف کارروائی کا بھی انتباہ جاری کردیا۔

اجلاس میں سی ای او سی پی پی اے کی عدم حاضری پر نیپرا کی جانب سے اظہار برہمی کیا گیا۔حکام نے بتایا کہ چیف ایگزیکٹو وزارت توانائی کے اجلاس میں شریک ہیں جس پر چیئرمین نیپرا نے کہا کہ ان سے کہیں پھر پیسے بھی وزارت سے لے لیں۔

واضح رہے کہ بجلی کمپنیوں نے گزشتہ مالی سال کی سہہ ماہی ایڈجسٹمنٹ کی مد میں 86 پیسے فی یونٹ اضافے کی درخواست نیپرا سے کی ہے۔ اگر یہ درخواست منظور ہوگئی تو صارفین پر 85 ارب 47 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں