53

اربوں روپے پانی میں بہہ گئے، سندھ اسمبلی کی نئی تعمیر شدہ عمارت کو بارش سے نقصان پہنچنے کا انکشاف

سندھ اسمبلی کی نئی تعمیر شدہ عمارت کو بارش سے نقصان پہنچنے کا انکشاف

سندھ حکومت کی تعمیر کردہ صوبائی اسمبلی کی نئی عمارت کو بھی بارش سے نقصان پہنچنے کا انکشاف ہوا ہے، اربوں روپے کی لاگت سے تعمیر شدہ سندھ اسمبلی بلڈنگ بارشوں کے دوران شدید متاثر ہوگئی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ 27 اگست کی بارش سے نئی اسمبلی بلڈنگ کا بجلی اور جنریٹر کا نظام خراب ہوا تھا۔

اسمبلی انتظامیہ تقریباً دو ماہ گزرنے کے بعد بھی عمارت اور بجلی کا نظام بحال نہ کرسکی اور سندھ اسمبلی کی نئی عمارت میں بجلی کا نظام اب تک غیرفعال ہے۔

سندھ اسمبلی کی نئی عمارت کو نقصان پہنچنے کی وجہ سے اجلاس پرانی عمارت میں بلایا گیا۔

سندھ اسمبلی کی نئی عمارت کی مرمت کے بعد اسمبلی ہال کو دوبارہ قابل استعمال بنایا جائے گا، سیکریٹری سندھ اسمبلی عمر فاروق نے نئی بلڈنگ میں سسٹم کی خرابی کی تصدیق کی ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں