51

آئی ٹی یونیورسٹی میں بے ضابطگیوں اور گھوسٹ ملازمین کا انکشاف

0

اسلام آباد (الشامی نیوز) انفارمیشن ٹیکنالوجی یونیورسٹی میں انتظامی اور مالی بے ضابطگیوں کا انکشاف، انکوائری شروع

تفصیلات کے مطابق انفارمیشن ٹیکنالوجی یونیورسٹی میں مالی اور انتظامی بے ضابطگیوں کا انکشاف ہوا ہے، ہائر ایجوکیشن کمیشن کو انفارمیشن ٹیکنالوجی یونیورسٹی میں گھوسٹ ملازمین کی موجودگی کی شکایت

خبر رساں ذرائع کے مطابق یہ بھی انکشاف ہوا ہے کہ آئی ٹی یو میں ظہیر سرور جو گزشتہ سات سال سے آئی ٹی یو میں غیر قانونی طور پر رجسٹرار تعینات ہیں وہ آئی ڈی یو میں گھوسٹ ملازمین کی سرپرستی کرتے ہوئے ان کو تحفظ فراہم کرتے رہے ہیں، گھوسٹ ملازمین آئی ٹی یو سے برسوں سے تنخواہیں وصول کر رہے ہیںجبکہ آئی ٹی یونیورسٹی میں گھوسٹ ملازمین کے بارے یہ شکایات بھی موصول ہوئی ہیں کہ وہ تنخواہ آئی ٹی یو سے وصول کررہے ہیں لیکن کام کسی اور جگہ کررہے ہیں ۔

، ذرائع کے مطابق جیسے ہی محکمہ ہائر ایجوکیشن کی جانب سے انکوائری شروع کی گئی اور وائس چانسلر سے ان انتظامی سیٹوں کی تفصیلات مانگی گئی ہیں تو ظہیر سرور فورا استعفی دے کر فرار ہو گئے۔

ظہیر سرور نے غیر قانونی طور پر دو بار مدت ملازمت میں توسیع حاصل کی، جبکہ آئی ٹی یو ایکٹ میں توسیع دینے کی شق ہی موجود نہیں، ظہیر سرور مختلف پراجیکٹس کی پوسٹوں سے بھی تنخواہ کے علاوہ لاکھوں روپے کی مراعات وصول کررہے تھے۔

رجسٹرار آئی ٹی یو ظہیر سرور کے استعفے دیئے جانے پر بھی ہائر ایجوکیشن کی جانب سے انکوائری کا آغاز کر دیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں