99

جنہوں نے سائنو فارم ویکسین لگوائی انہیں دوسری خوراک بھی سائنو فارم کی ہی لگے گی

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان کا کہنا ہے کہ جن شہریوں نے چین کی تیار کردہ کورونا ویکسین سائنو فارم کی پہلی خوراک لگوائی ہے انہیں دوسری خوراک بھی سائنو فارم کی ہی لگے گی۔

فیصل سلطان نے کہا کہ ہم سائنسی بنیادوں پر ویکیسن کو مکس اور میچ کو  تجویز نہیں کررہے، سائنوفارم ویکسین ویکسینیشن مراکز میں موجود ہے، لوگوں سے گزارش ہے ویکسینیشن لازمی کروائیں، یہ غلط بات ہے کہ سائنو فارم ویکسین ختم کر دی گئی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ پاکستان میں اب تک 38 لاکھ سے زائد ویکیسن کی خوراکیں لگائی جاچکی ہیں، 38 لاکھ سے زائد خوراکوں میں سے 4329 کے منفی اثرات سامنے آئے، ویکیسن سے متعلق منفی اثرات معمولی نوعیت کے رپورٹ ہوئے، 90 فیصد شکایات انجکشن کی جگہ درد اور بخار کی تھیں، ویکیسن کے باعث 6 سنگین نوعیت کے واقعات سامنے آئے، ہر کیس کی اچھی طرح سے تفتیش کی گئی، سنگین نوعیت کا ہر کیس اتفاقی تھا، ویکسین سے تعلق نہیں تھا۔

ڈآکٹر فیصل سلطان نے کہا کہ کورونا کی برطانوی ویکسین آسٹرا  زینیکا سے متعلق افواہیں بے بنیاد ہیں، آسٹرا زینیکا آسٹریلیا، فرانس ،جرمنی ،جنوبی کوریاسمیت کئی ملکوں میں لگائی جارہی ہے، اس ویکسین سے متعلق اطلاع گمراہ کن ہے، آسٹرا زینیکا ویکسین کے فوائد بہت زیادہ اور منفی اثر بہت تھوڑاہے۔

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں