110

ایف بی آر کی آڈٹ پالیسی کی منظوری، دس ہزار کیسز کا انتخاب

اسلام آباد ( الشامی نیوز ) ایف بی آر نے ٹیکس سال 2018کے لئے آڈٹ پالیسی کی منظوری دے دی ہے اور رسک بیسڈ دائرہ کا ر کی بنیاد پر بے مقصد ( رینڈم ) قرعہ اندازی کے ذریعہ دس ہزار کیسز کا انتخاب کیا ہے ۔ایف بی آر کے نئے ترجمان ندیم رضوی نے کہا کہ آڈٹ کے لئے کیسز کے انتخاب کو افشا نہیں کیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ تخواہ کے ذریعہ آمدن کو آڈٹ میں شامل نہیں کیا گیا ہے تاہم اگر تنخواہ دار شخص کی قابل لا گو آمدن 50فیصد سے تجاوز کر جا تی ہے تو کیس کی آڈٹ کے ذریعہ جانچ پڑتال کی جا سکتی ہے ۔آڈٹ پالیسی 2019ان تمام افراد یا طبقات پر لا گو ہو گی جو انکم ٹیکس آرڈننس 2001،سیلزٹیکس ایکٹ 1990اور فیڈرل ایکسائز ایکٹ 2005کے تحت آتے ہیں ۔آڈٹ کے لئے کیسز کا انتخاب نئے تیار کردہ سافٹ وئیر رسک بیسڈ آڈٹ منیجمنٹ سسٹم ( آر اے ایم ایس ) کے ذریعہ ہو

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں