137

آمدن سے زائد خرچہ میٹرو ٹرین پنجاب حکومت کے لئے درد سر بن گئی

لاہور (الشامی نیوز)پنجاب حکومت کی جانب سے لاہور میں بنائی جانے والی ۔ اورنج لائن میٹروٹرین پر70لاکھ پانچ ہزار 894 مسافروں سے کرایہ کی مد میں 28 کروڑ 23 لاکھ 576 روپے آمدن ہوئی جبکہ 35 کروڑ 35 لاکھ 39 ہزار837 روپے کی بجلی استعمال ہو چکی ہے، جبکہ دیگر اخراجات اس کے علاوہ ہیں۔

نجی خبر رساں ادارے کے مطابق محکمہ ٹرانسپورٹ پنجاب کی ناقص منصوبہ بندی کے باعث اورنج لائن ٹرین کے خسارے میں اضافہ ہوگیا ہے، جبکہ اس کی ایک بنیادی وجہ یہ بھی ہے کہ اورنج لائن ٹرین کے فیڈر روٹس پر نہ بسیں چلیں اور نہ ہی ٹریک کے نیچے پبلک ٹرانسپورٹ کو روکا جاسکا ہے۔

دوسری جانب اورنج ٹرین پر سفر کرنے والوں کی تعداد میں کمی سے ٹرین کا خسارہ بڑھنے لگا جس پر ماس ٹرانزٹ اتھارٹی (ایم ٹی اے) کے حکام نے ٹرین کے کرایے میں 10 روپے کم کرنے کی تجویز دے دی ہے۔

گزشتہ روز ماس ٹرانزٹ اتھارٹی کے اجلاس میں مشیر ڈاکٹر سلمان شاہ کو دی جانے والی بریفنگ میں کہا گیا ہے کہ اورنج لائن ٹرین پر مسافروں کی تعداد بڑھنے کی بجائے کم ہورہی ہے طے کردہ اہداف حاصل نہیں ہو رہے لہٰذا کرایہ 40 کے بجائے 30 روپے مقرر کیا جانا چاہیے۔

مگر اس حوالے سے وزیر ٹرانسپورٹ پنجاب محمد جہانزیب خاں کھچی نے کہا کہ کرایہ میں کمی سے اورنج ٹرین کا ریونیو اور مسافروں کی تعداد نہیں بڑھائی جاسکتی۔ فیڈر روٹس پر الگ سے بسیں چلانے کیلئے فنڈز نہیں ہیں، ہم سپیڈو سروس کی 200 بسوں کے روٹس کو ازسر نو ترتیب دے رہے ہیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں